1 مارچ, 2021
d988d8b2db8cd8b1d8a7d8b9d8b8d985 daa9db8c d9bed8b1d988db8cd8b2d8aed9b9daa9 daa9d988 d986d988d8b4db81d8b1db81 d8a7d984db8cdaa9d8b4d986
سیاستاسلام آبادپاکستانپیشاورخبریں

وزیراعظم کی پرویز خٹک کو نوشہرہ الیکشن دھاندلی سے متعلق شواہد اکھٹا کرنے کی ہدایت

وزیراعظم عمران خان نے پرویز خٹک کو نوشہرہ الیکشن دھاندلی سے متعلق شواہد اکھٹا کر کے الیکشن کمیشن میں جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔

تفصیلات کے مطابق پشاور میں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا، جس میں وزیراعظم نے پرویزخٹک کو نوشہرہ الیکشن دھاندلی سے متعلق شواہد اکھٹا کرنے اور نوشہرہ الیکشن دھاندلی کی تفصیلات الیکشن کمیشن میں جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔

اجلاس میں وزیر دفاع پرویزخٹک نے وزیراعظم کو نوشہرہ الیکشن میں شکست کی وجوہات سے آگاہ کیا جبکہ پارلیمانی پارٹی اجلاس میں اراکین نے شکایات کے انبار لگا دیئے۔

اراکین اسمبلی نے شکوہ کیا کہ بیوروکریسی اراکین اسمبلی کوکوئی اہمیت نہیں دے رہی اور وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ ہمارے لئے نوگو ایریا بن چکا ہے جبکہ تھانوں میں ایک بار پھر روایتی پولیس کلچر شروع ہو گیا ہے۔

یاد رہے تحریک انصاف کے امیدوار نے پی کے 63 نوشہرہ کے انتخابی نتائج کو چیلنج کر دیا ہے، جس میں کہا کہ انتخابی عملے نے سیریل نمبر، ووٹوں کی تفصیل میں واضح رد و بدل کی، فارم 46 کی مختلف ریکارڈ پر مشتمل 2،2 تصدیق شدہ کاپیاں جاری کی گئیں۔

درخواست میں کہا گیا تھا کہ ایک پولنگ اسٹیشن پر 1500 بیلٹ پیپرز غائب پائے گئے، پولنگ اسٹیشن نمبر 41 میں 1200 بیلٹ پیپر جاری، 483 ووٹ کاسٹ ہوئے اور 717 کے بجائے 1317 بیلٹ پیپرز ریٹرننگ آفسر کو واپس کئے گئے۔

دائر درخواست میں کہا تھا کہ ایک پولنگ اسٹیشن پر 1800 بیلٹ پیپر جاری مگر 2400 ووٹ کاسٹ ہوئے، 40 فیصد پولنگ اسٹیشنز پر بد انتظامی، بے قاعدگیاں سامنے آئیں۔

خیال رہے نوشہرہ کے حلقہ پی کے 63 کے 6000 ووٹ غائب ہونے کا انکشاف سامنے آیا، ذرائع کا کہنا تھا کہ جیت کا فرق 4100 جبکہ غائب ووٹوں کی تعداد 6000 سے زائد ہے اور تصدیق شدہ فارم 46 میں واضح فرق سامنے آ گیا، 6000 ووٹوں کا ریکارڈ نہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے