20 جنوری, 2021
8
حیدرآبادپاکستانخبریںسندھکاروبار

رات کے وقت تقاریب پر پابندی، شادی ہالز مالکان نے دھمکی دے دی

 اطلاعات کے مطابق حیدرآباد کی شادی ہالزایسوسی ایشن نے اعلان کیا کہ رات کے وقت شادی کی تقاریب پر پابندی کے خلاف کل کمشنر آفس کا گھیراؤ کریں گے۔

ایسوسی ایشن کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ آج حیدرآباد میں قائم تمام شادی ہالز مالکان نے احتجاجاً تقاریب ملتوی کردیں۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ صرف حیدرآباد میں رات کی شادیوں پر پابندی عائد کی گئی، حکومت نے یہ بہت زیادہ سخت قدم اٹھایا ہے۔

دوسری جانب کمشنر حیدرآباد عباس بلوچ نے کہا کہ ’شہر میں کرونا کی صورت حال گھمبیر ہو گئی ہے، اسی وجہ سے رات کی تقاریب پر پابندی عائد کی گئی۔‘

اُن کا کہنا تھا کہ ’شادی ہالزمالکان کو مزید 4۔2 دن تو دے سکتے ہیں مگر رات کے وقت تقاریب کی اجازت نہیں دی جا سکتی کیونکہ سخت سردی میں شادی کی تقریبات رات کے وقت میں ہونا خطرناک ثابت ہو سکتی ہیں۔‘

واضح رہے کہ 29 نومبر کو سندھ حکومت نے حیدرآباد میں شادیوں کی تقاریب کے انعقاد کے حوالے سے نوٹی فکیشن جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ رات کے وقت کسی بھی تقریب کے انعقاد پر پابندی ہو گی۔

نوٹیفکیشن میں ہدایت کی گئی تھی کہ شادی سمیت دیگر تقاریب کا انعقاد صبح 11 سے دوپہر ساڑھے 3 بجے تک کیا جا سکے گا۔ حکومت کے جاری کردہ نوٹیفکیشن میں کہا گیا تھا کہ  اب دن میں ہی شادی کی تقریبات صرف آوٹ ڈور منعقد کی جائیں گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے