بدھ, اکتوبر 27
2
ایشیابین الاقوامیتعلیم و صحتخبریں

بھارت میں کرونا وبا کی تشویشناک صورتحال کے بعد مساجد اسپتالوں میں تبدیل

بھارت میں کرونا وبا کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے باعث مسلمانوں نے مساجد کو اسپتالوں میں تبدیل کر دیا ہے۔

مسلمانوں کے خلاف ہندو انتہا پسندی اور بربریت کے باجود بھارتی مسلمان بھی بھارت میں کرونا کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے باعث انسانیت کا جذبہ لیے آگے آگے ہیں۔

مغربی ریاست گجرات میں ایک مسجد کو 50 بستروں کے اسپتال میں تبدیل کیا گیا ہے۔ مساجد میں مسلمانوں کی جانب سے تشویشناک مریضوں کو آکسیجن فراہم کی جا رہی ہے اوران کے لیے بستروں کا انتظام کیا جا رہا ہے۔

مسجد کے منتظم کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی صورتحال بہتر نہیں اورلوگوں کو علاج کے لیے اسپتال میں بستر نہیں مل رہے تو ہم نے متاثرین کے لیے مسجد کو ہی اسپتال میں تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا۔ اسی صورتحال کے پیش نظر کئی دنوں میں ہی مسجد میں تمام بیڈز بھر گئے ہیں۔

دوسری جانب دارالعلوم دیوبند نے بھی 20 نرسوں اور 3 ڈاکٹروں کے ساتھ 142 بستروں پر مشتمل اسپتال کی سہولت کرونا وائرس کے مریضوں کو فراہم کی ہے جن میں ہر مذہب کے لوگ زیر علاج ہیں۔ مسجد کی کمیٹی رکن نے کہا کہ ہم کرونا وائرس کے مریضوں کے لیے ایک ہزار بیڈ پر مشتمل اسپتال بنا سکتے ہیں تاہم آکسیجن کی فراہمی میں رکاوٹ ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے