0
0
0
تحقیقات کے دوران درخواست گزاروں کیخلاف جعلسازی کے واضح شواہد مل گئے ہیں اور قانونی کارروائی کی جائے گی: ایف آئی اے

شعیب سعید آسی

جاپانی ویزہ کے حصول کیلئے کراچی میں 10 پاکستانی شہریوں نے جاپان قونصلیٹ میں جعلی دستاویزات جمع کرا دیں۔

وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) ذرائع کے مطابق کراچی میں جاپانی قونصلیٹ کے پولیس اتاشی اور سیکیورٹی چیف کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے اسلام آباد کو تحریری درخواست دی گئی تھی کہ کراچی کے رہائشی ایک شہری حسنین الحسن نے جاپان کے تفریحی دورے کیلئے درخواست جمع کرائی ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ شہری نے ویزہ درخواست کے ساتھ دستاویزات میں خود کو ایک میڈیسن کمپنی کا سیلز  ایگزیکٹو ظاہر کیا اور نجی بینک میں اپنے اکاؤنٹ کے 6 ماہ کی ٹرانزیکشن کی تفصیلات بھی دی جو چھان بین کے دوران مشکوک قرار دی گئیں۔

قونصلیٹ نے مذکورہ دستاویزات کی مزید تحقیقات کیلئے ایف آئی اے سے درخواست کی۔ 

قونصلیٹ کے سیکیورٹی انچارج کے مطابق اس عرصے میں بعض دیگر درخواست گزاروں کی جانب سے فراہم کی گئی اسی طرح کی دستاویزات کی بھی چھان بین کی گئی تو وہ جعلی نکلیں۔

ایف آئی اے ذرائع نے بتایا کہ متعلقہ بینک نے تمام اکاؤنٹ اسٹیٹمنٹس کو بوگس قرار دیا ہے، اسی طرح مذکورہ میڈیسن کمپنی کے ایچ آر ڈیپارٹمنٹ نے بھی ان درخواست گزاروں کی ملازمت اور  تجربہ کے سرٹیفکیٹس کو جعلی قرار دیا ہے۔

ایف آئی اے حکام کے مطابق اس سلسلے میں جاپانی قونصلیٹ حکام کو آگاہ کیا جا رہا ہے جس کے بعد ان افراد کے خلاف مقدمات درج کیے جائیں گے۔

ایف  آئی اے کا کہنا ہے کہ تحقیقات کے دوران درخواست گزاروں کے خلاف جعلسازی کے واضح شواہد مل گئے ہیں جن کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس