اداکار و پروڈیوسر شمعون عباسی کی تجسس خیز فلم ’دُرج‘ کو رواں سال 11 اکتوبر کو دنیا بھر میں جب کہ 18 اکتوبر کو پاکستان میں نمائش کے لیے پیش کیا جانا تھا اور فلم کو عالمی کانز فلم فیسٹیول میں بھی پیش کیا جانا تھا۔

شعیب سعید آسی

داکار و پروڈیوسر شمعون عباسی کی رواں ماہ ریلیز کی جانے فلم ’دُرج‘ پر سینسر بورڈ کی جانب سے پابندی عائد کردی گئی۔

شمعون عباسی نے گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر فلم کو ریلیز کرنے کی تاریخ کا اعلان کیا تھا اور ان کا کہنا تھا کہ پاکستان سینما انڈسٹری کو رواں ماہ کچھ مختلف دیکھنے کو ملے گا۔

اداکار و پروڈیوسر شمعون عباسی کی تجسس خیز فلم ’دُرج‘ کو رواں سال 11 اکتوبر کو دنیا بھر میں جب کہ 18 اکتوبر کو پاکستان میں نمائش کے لیے پیش کیا جانا تھا اور فلم کو عالمی کانز فلم فیسٹیول میں بھی پیش کیا جانا تھا۔

فلم ’دُرج‘ پر حال ہی میں تمام سینسر بورڈ کی جانب سے پابندی عائد کردی گئی ہے تاہم پابندی عائد کرنے کی وجہ اب تک سامنے نہیں آسکی۔

فلم ’دُرج‘ کے حوالے سے اداکار کا کہنا تھا کہ بہت سارے اداکاروں نے اس فلم کو بنانے کے عمل کے دوران چھوڑ دیا تھا، کچھ میں اتنی ہمت نہیں تھی کہ پہاڑوں پرسخت دھوپ میں عکس بندی کرسکیں جب کہ کچھ لوگ اس فلم پر یقین ہی نہیں کرتے تھے ۔

واضح رہے کہ ’دُرج‘ کی ہدایات کاری بھی شمعون عباسی نے کی ہے اور اس کی کہانی بھی انہوں نے ہی لکھی ہے، فلم میں مرکزی کردار بھی شمعون عباسی نے ہی کیا ہے اور ان کے ساتھ دیگر کاسٹ میں مائرہ خان، شیری شاہ، نعمان جاوید اور دیگر اداکار شامل ہیں۔

آدم خور انسانوں پر مبنی فلم کی ایسی کہانی اس سے قبل برصغیر میں کسی ڈائریکٹر نے نہیں بنائی، ہیڈ ڈائریکٹر شمعون عباسی اور پروڈکشن ٹیم نے فلم کو حقیقی رنگ دینے کے لیے کئی مہینے ریسرچ کی اور انہوں نے کافی وقت دنیا سے الگ تھلگ غاروں میں رہنے والے انسانوں کے ساتھ گزارا تاکہ اِن کے طرز زندگی کی پُراسراریت کو صحیح روپ میں فلم بینوں کے سامنے پیش کر سکیں۔

فلم کے ریلیز کردہ ابتدائی ٹریلرز کو اب تک یوٹیوب اور سوشل میڈیا پر لاکھوں افراد دیکھ اور سراہ چکے ہیں اور فلم کی ریلیز کا بے صبری سے انتظار کر رہے ہیں۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس