0
0
0
وفاقی وزیر نے کہا کہ عزوہ ہند کی ابتدا ہو چکی ہے، جنگ کا عملی طور پر آغاز ہو چکا ہے، ہم نے فیصلہ کرنا ہے کہ کب اور کس کس جگہ پر کس طرح سے جوابی حملہ کرنا ہے۔

شعیب سعید آسی

وفاقی وزیر علی محمد خان نے کہا ہے کہ عزوہ ہند کی ابتدا ہو چکی ہے۔

اسلام آباد میں کشمیر سیمینار سے خطاب میں علی محمد خان کا کہنا تھا کہ اس گھر کا سوچیں جہاں زیادتی کو بطور جنگی ہتھیار استعمال کیا جا رہا ہے، مقبوضہ کشمیر میں 80 سال کی خاتون سے ان کے پوتوں کے سامنے زیادتی کی جا رہی ہے۔

علی محمد خان نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم کی انتہا کر دی ہے لیکن ہم کشمیریوں کی آزادی تک ان کےساتھ ہیں، بھارت حملہ کر چکا ہے، ہم اس کا جواب دے رہے ہیں۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ عزوہ ہند کی ابتدا ہو چکی ہے، جنگ کا عملی طور پر آغاز ہو چکا ہے، ہم نے فیصلہ کرنا ہے کہ کب اور کس کس جگہ پر کس طرح سے جوابی حملہ کرنا ہے۔

خیال رہے کہ بھارت نے 5 اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق آرٹیکل 370 ختم کرکے وہاں غیر معینہ مدت تک کے لیے کرفیو نافذ کر دیا تھا۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کے بلیک آؤٹ کو ایک ماہ سے زائد وقت ہو چکا ہے، لاکھوں بھارتی فوجیوں نے جنت نظیر وادی کو کھلی جیل میں تبدیل کر رکھا ہے، کشمیریوں کا رابطہ پوری دنیا سے منقطع ہے اور پاکستان کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو بین الاقوامی سطح پر اجاگر کیا جا رہا ہے۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس