0
0
0
دوسری طرف پی ایچ ایف سیکریٹری اولمپیئن آصف باجوہ اور اولمپیئن سہیل عباس کے درمیان عبدالستار ہاکی اسٹیڈیم میں ملاقات ہی نہ ہو سکی اور سہیل عباس نے فون پر ہی اپنی عدم دستیابی سے سیکرٹری آصف باجوہ کو آگاہ کر دیا۔

شعیب سعید آسی

اولمپیئن سہیل عباس نے پاکستان ہاکی فیڈریشن کے ساتھ کام کرنے سے معذرت کر لی۔

پاکستان ہاکی فیڈریشن (پی ایچ ایف) خواہش رکھتا ہے کہ نئے اور نوجوان اولمپیئنز کو قومی ہاکی ٹیم کی کوچنگ کے ساتھ منسلک کیا جائے۔ اس حوالے سے فیڈریشن کے سربراہ بریگیڈیئر (ر) خالد سجاد کھوکھر نے 2000ء سڈنی اولمپکس کھیلنے والے اولمپیئن سمیر حسین کو کوچنگ اسٹاف کا حصہ بنایا ہے۔

دوسری طرف پی ایچ ایف سیکریٹری اولمپیئن آصف باجوہ اور اولمپیئن سہیل عباس کے درمیان عبدالستار ہاکی اسٹیڈیم میں ملاقات ہی نہ ہو سکی اور سہیل عباس نے فون پر ہی اپنی عدم دستیابی سے سیکرٹری آصف باجوہ کو آگاہ کر دیا۔

بین الاقوامی ہاکی میں پاکستان کیلئے سب سے زیادہ گول کرنے والے سابق کپتان سہیل عباس کو پنالٹی کارنر کے شعبے کا ماہر کہا جاتا ہے، وہ بین الاقوامی سطح پر دنیا کے مختلف ممالک میں لیگ ہاکی بھی کھیل چکے ہیں۔

سہیل عباس پاکستان ہاکی فیڈریشن کے حوالے سے نہ صرف تحفظات رکھتے ہیں بلکہ وہ ملکی سطح پر اولمپیئنز کے ساتھ بھی فاصلہ رکھتے ہیں۔

کچھ عرصے قبل کراچی میں ہاکی فیڈریشن کی 'ہال آف فیم' تقریب کے ساتھ ورلڈ الیون میچ میں بھی انہوں نے آنے سے معذرت کر لی تھی جب کہ ہاکی فیڈریشن کے سیکرٹری اولمپئین آصف باجوہ کے ساتھ ملاقات سے بھی گریز کیا۔

اس تمام صورت حال پر محتاط انداز میں گفتگو کرتے ہوئے آصف باجوہ کا کہنا تھا کہ اولمپیئن سہیل عباس ہمارا فخر ہیں اور جلد وہ ہمارے کارواں میں شامل ہوکر قومی کھیل ہاکی کی ترقی میں ہمارا ساتھ دیں گے۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس