0
0
0
پاکستان کی مادھوری ڈکشت کہلانا اعزاز کی بات ہے

شعیب سعید آسی

پاکستان کی مقبول اداکارہ ماہرہ خان گزشتہ ہفتے سینیئر ٹی وی اداکار فردوس جمال کی تنقید کا نشانہ بنیں جس پر مداحوں نے اداکارہ کا ساتھ دیا اور ماہرہ خان نے بھی تنقید کا جواب مثبت انداز سے دیا۔

ماہرہ خان نے آج جیو نیوز کے مارننگ شو ' جیو پاکستان' سے خصوصی گفتگو کی جس میں انہوں نے فردوس جمال کی تنقید کا مثبت جواب دینے کے حوالے سے بات چیت کی۔

ماہرہ خان کا کہنا تھا کہ جب مجھ پر تنقید کی گئی تو 'میں نے کوئی ردعمل نہیں دیا کیونکہ آپ جانتے ہیں کہ میں ان چیزوں پر ردعمل نہیں دیتی لیکن پوری انڈسٹری اور میرے مداح نے اس پر ردعمل دیا اور بُرا منایا جس کے باعث میں نے سوچا کہ اپنے جذبات کا اظہار کروں گی'۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ جب بھی لوگ تنقید کرتے ہیں تو دل دکھتا ہے لیکن میری والدہ نے ہمیشہ ان سب سے آگے بڑھنا سیکھایا ہے، انہوں نے ہمیشہ چیزوں کو مثبت اور روشن نظریے سے دیکھنے کی عادت ڈالی ہے۔

ماہرہ خان کہتی ہیں کہ ان کا ماننا ہے کہ اتنی زیادہ تعداد میں محبت جو انہیں ملی وہ نفرت پر بھاری ہے۔

دوسری جانب ماہرہ خان نے اپنے نئے گانے 'مورے سئیاں' اور 'نوری' میں بالی وڈ اداکارہ مادھوری ڈکشت سے تشبیہ دینے پر بھی اظہار خیال کیا۔

اس حوالے سے ماہرہ خان کا کہنا تھا کہ 'مجھے کبھی بھی کسی بھی بالی وڈ اداکارہ سے نہیں ملایا گیا تو مجھ میں مادھوری ڈکشت کی جھلک دکھنا معنی رکھتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ وہ مادھوری کی بہت بڑی مداح ہیں اور پاکستان کی مادھوری ڈکشت کہلانا اعزاز کی بات ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے ایک نجی چینل پر اداکار فردوس جمال نے ماہرہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ 'کسی کو برا لگے یا اچھا، ماہرہ خان ہیروئن اسٹف نہیں ہے، وہ درمیانے درجے کی ماڈل ہے، وہ اچھی ایکٹرس نہیں اور اچھی ہیروئن بھی نہیں، سوری ٹو سے، ایک تو اس کی عمر زیادہ ہے، مطلب اس عمر میں ہیروئنیں نہیں ہوتی بلکہ ماں کے کردار کیے جاتے ہیں‘۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس