0
0
0
5 سالہ افغان بچے احمد سعید رحمان کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بچہ اپنی مصنوعی ٹانگ لگنے کی خوشی میں انٹرنیشنل کمیٹی ریڈ کراس (آئی سی آر سی) کے آرتھو پیڈک اسپتال میں رقص کررہا ہے۔

شعیب سعید آسی

افغان حکومت اور طالبان کی لڑائی میں گولی لگنے سے اپنی دائیں ٹانگ کھونے والے افغان بچے احمد سعید رحمان کو مصنوعی ٹانگ لگا دی گئی جسے دیکھ کر وہ خوشی سے نہال ہوگیا اور اس کی رقص کرنے کی ویڈیو وائرل ہوگئی۔

5 سالہ افغان بچے احمد سعید رحمان کی وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بچہ اپنی مصنوعی ٹانگ لگنے کی خوشی میں انٹرنیشنل کمیٹی ریڈ کراس (آئی سی آر سی) کے آرتھو پیڈک اسپتال میں رقص کررہا ہے۔

احمد کی مصنوعی ٹانگ لگنے کی خوشی میں رقص کرنے کی ویڈیو اسپتال کی ایک تھراپسٹ ملگارا راحیمی نے بنائی جنہوں نے یہ ویڈیو ایک ہفتے قبل اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر شیئر کی جس کے بعد اسپتال کے دیگر عملے نے بھی ویڈیو شیئر کی جو دیکھتے دیکھتے وائرل ہوگئی۔

سوشل میڈیا پر احمد کی ویڈیو دیکھنے کے بعد متعدد صارفین نے بچے کے حوصلے کو داد دی اور اس کے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

احمد کی فزیو تھراپسٹ سمین سروری کہتی ہیں کہ احمد اسپتال میں طویل عرصے سے ہے، وہ کھیلنا کودنا چاہتا ہے لیکن اس کی دائیں ٹانگ 8 ماہ کی عمر میں ہی ضائع ہوگئی تھی اور اب وہ اپنی ٹانگ چاہتا تھا تاکہ جلد ہی چل سکے۔

احمد کی والدہ نے کہا کہ مصنوعی ٹانگ لگنے کے بعد سے احمد خوشی کا اظہار کرتا ہے جس کے لیے میں بہت خوش ہوں کہ اب میرا بیٹا بھی اسکول جا سکے گا۔

بچے کی والدہ نے بتایا کہ ان کا تعلق لوگار گاؤں سے ہے جہاں اکثر افغان فورسز اور طالبان کے درمیان جھڑپیں جاری رہتی ہیں اور ایسی ہی ایک جھڑپ میں احمد اور اس کی بہن بھی زخمی ہوئے۔

آئی سی آر سی کے مطابق کابل میں ہنگامی صورتحال کے باعث گزشتہ 30 برسوں میں ایک لاکھ سے زائد افراد کو مصنوعی اعضاء لگائے گئے ہیں جن میں 10 فیصد تعداد بچوں کی ہے۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس