0
0
0
مقتول منور علی کو عدالتی حکم پر گرفتار کیا جانا تھا تاہم سہیل مغل نے پولیس موبائل سے نکل کر منور علی پر گولیاں برسا دیں جس سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔

شعیب سعید آسی

کراچی میں کے علاقے بہادر آباد میں پولیس موبائل میں بیٹھ کر ملزم کی نشاندہی کے لیے آنے والے مدعی نے پولیس کے سامنے ہی مطلوب شخص کو قتل کر دیا۔

مدعی سہیل مغل درخشاں تھانے کے ایڈیشنل ایس ایچ او راجہ تنویز کے ہمراہ اپنی بیوی اور تین بیٹیوں کی بازیابی کا عدالتی حکم لے کر موبائل میں بیٹھ کر بہادر آباد کے علاقے شرف آباد میں رہائش پزیر منور علی کی رہائشگاہ آیا تھا۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ مقتول منور علی کو عدالتی حکم پر گرفتار کیا جانا تھا تاہم سہیل مغل نے پولیس موبائل سے نکل کر منور علی پر گولیاں برسا دیں جس سے وہ موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا۔

پولیس نے ملزم سہیل مغل کو جائے واردات سے گرفتار کرکے پستول ضبط کر لیا۔

پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ ملزم سہیل مغل کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا جائے گا جب کہ درخشاں تھانے کے پولیس اہلکاروں کے خلاف بھی مجرمانہ غفلت کا مقدمہ درج کیا جائے گا۔

دوسری جانب نیو ٹاؤن پولیس نے ایڈیشنل ایس ایچ او درخشاں سمیت 4 اہلکاروں کو حراست میں لے کر واقعہ کی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس