0
0
0
وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر نے کہا ہے کہ حکومت کی طرف سے گیس چوری کے خلاف کریک ڈاؤن کیلئے اقدامات کیے جائیں گے۔

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے حماد اظہر نے کہا کہ گزشتہ 5 سال میں گیس کیلئے کوئی نیا معاہدہ نہیں کیا گیا۔
وزیر مملکت برائے ریونیو کا کہنا تھا کہ ٹیکس کا زیادہ بوجھ عوام پر نہیں ڈالا جا رہا، حکومت نے ماہانہ 2 لاکھ روپے تنخواہ پانے والوں پر ٹیکس نہیں لگایا۔ خیال رہے کہ تحریک انصاف کی حکومت پر یہ تنقید کی جا رہی ہے کہ اس نے آتے ہی عوام پر ٹیکسوں کا بوجھ لاد دیا ہے۔
حماد اظہر نے مزید کہا گردشی قرضہ 500 ارب سے بڑھ کر 1200 ارب ہوچکا ہے، ن لیگ حکومت نے نان فائلرز کو سہولت دی تھی۔ دوسری طرف پی ٹی آئی حکومت پر تنقید ہو رہی ہے کہ اس نے نان فائلرز کو گاڑیاں خریدنے کی سہولت دی۔
وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ درآمدی اشیا پر ٹیکس غیرملکی کرنسی کے منافع کے لیے لگایا گیا ہے، حکومت نے 12 لاکھ سالانہ انکم پر ٹیکس نہیں لگایا، حکومت کا منی بجٹ ایکسپورٹ سیکٹر کیلئے فرینڈلی ہے۔
حماد اظہر نے مزید کہا کہ پاکستان اسٹیل میں تبدیلی فنانس بل میں نہیں بلکہ ایڈمنسٹریٹو بل سے ہو گی، دوسری طرف حکومت یہ بھی چاہتی ہے کہ فیصل آباد ریجن میں بند فیکٹریاں دوبارہ فعال ہوں۔
وفاقی وزیر نے آنے والے دنوں میں حکومتی منصوبوں کے بارے میں کہا کہ فاٹا میں صحت کارڈ کا نظام لایا جا رہا ہے۔ صنعتوں کے حوالے سے کہا کہ صنعتیں چلیں گی تو لوگوں کی آمدن میں بھی اضافہ ہو گا۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس