28 جنوری, 2021
d982d988d985db8c d8aad8b1d8a7d986db92 daa9db92 d8aed8a7d984d982 d8add981db8cd8b8 d8acd8a7d984d986d8afdabed8b1db8c daa9d8a7 db8cd988d985
خبریںفن و ثقافت

قومی ترانے کے خالق حفیظ جالندھری کا یومِ پیدائش

آج پاکستان کے قومی ترانے کے خالق حفیظ جالندھری کا یومِ ولادت منایا جارہا ہے۔ وہ 14 جنوری کو متحدہ ہندوستان کے مشہور شہر جالندھر میں پیدا ہوئے تھے۔ تقسیم کے بعد کئی شعرا میں سے حفیظ جالندھری کے لکھے ہوئے ترانے کو قومی ترانہ منتخب کیا گیا

حفیظ جالندھری نظم اور غزل دونوں کے قادرالکلام شاعر تھے۔ تاہم ان کا سب سے بڑا کارنامہ شاہنامہ اسلام ہے جو چار جلدوں میں شایع ہوا۔ اس کے ذریعے انھوں نے اسلامی روایات اور قومی شکوہ کا احیا کیا جس پر انھیں فردوسیِ اسلام کا خطاب دیا گیا۔

حفیظ جالندھری نے یہ قومی ترانہ احمد جی چاگلہ کی دھن پر تخلیق کیا تھا اور 1954ء میں اسے قومی ترانے کے طور پر منظور کیا گیا تھا۔

حفیظ جالندھری کے شعری مجموعوں میں نغمہ بار، تلخابہ شیریں اور سوز و ساز، افسانوں کا مجموعہ ہفت پیکر، گیتوں کے مجموعے ہندوستان ہمارا، پھول مالی اور بچوں کی نظمیں قابلِ ذکر ہیں۔

حفیظ جالندھری نے 21 دسمبر 1982ء کو لاہور میں وفات پائی۔ وہ مینار پاکستان کے احاطے میں آسودہ خاک ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے