0
0
0
متحدہ عرب امارات کی عدالت نے شوہر کا موبائل بلا اجازت چیک کرنے پر بیوی کو 3 ماہ قید کی سزا سنا دی۔

عرب میڈیا کے مطابق متحدہ عرب امارات کے شہر راس الخیمہ کی عدالت میں درخواست دائر کی گئی تھی کہ جس میں درخواست گزار کا مؤقف تھا کہ جب وہ نیند میں ہوتا ہے تو اس کی بیوی خاموشی سے موبائل اٹھا کر اس میں گھس جاتی ہے۔
درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ اس نے اپنی بیوی کو سختی سے منع کیا مگر اس کے باوجود اہلیہ نے موبائل فون کی تصاویر اور پیغامات نہ صرف دیکھے بلکہ بعض ذاتی معلومات بچوں کو بھی ارسال کیں۔
خاتون کے وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ میری مؤکلہ کے شوہر نے خود ہی اسمارٹ فون کا پاس ورڈ دیتے ہوئے اسے استعمال کرنے کی اجازت دی۔
ملزمہ کے وکیل نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ میری مؤکلہ نے شوہر کو دوسری خاتون کے ساتھ بات کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں بھی پکڑا ہے جس کے بعد دونوں فریقین نے اپنے موبائل پاس ورڈ ایک دوسرے کو دیئے تھے تاکہ شکوک و شبہات ختم ہوجائیں۔
درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ ملکی قوانین کے تحت میری اہلیہ ذاتی معلومات تک نہ صرف رسائی حاصل کرتی ہے بلکہ مداخلت بھی کرتی ہے لہٰذا معزز جج اس پر فیصلہ سنائیں۔
عدالت نے سماعت مکمل ہونے پر فیصلہ سناتے ہوئے ملزمہ کو 3 ماہ تک قید کرنے کا حکم دیا۔ جج کا کہنا تھا کہ قانون کے تحت میاں بیوی یا کسی بھی دو فریقین کو ایک دوسرے پر شک بھی ہے تو وہ بغیر اجازت ایک دوسرے کا موبائل چیک نہیں کر سکتے، قانون کی خلاف ورزی پر ملزمہ کو سزا دی گئی۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس