0
0
0
شاعرہ: عنبرؔ شاہد

نہ رکا تھا نہ رکے گا قافلہ حسینؑ کا 
اب قیامت تک رہے گا فلسفہ حسینؑ کا

جس کی پیشانی پہ بوسہ ہے میرے سرکارﷺ کا
دونوں عالم میں نمایاں مرتبہ حسینؑ کا 

مٹ گیا نام یزید اور زندہ ہے حسینؑ 
حق  کے ایوانوں میں ہے بس تذکرہ حسینؑ کا

سانحے درپیش ہیں کچھ  کربلا سے آج  بھی 
بننا ہے فاتح تو چن لو راستہ حسینؑ کا 

بت کدے باطل کے ملکر ہم مٹا ڈالیں چلو 
آؤ پیدا خود میں کرلیں حوصلہ حسینؑ کا

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس