0
1
0
ہر سال وقوف عرفہ کے دن پرانا غلاف اتار کر نیا غلاف کعبہ پر چڑھانے کی روایت پرانی ہے۔

غلاف کعبہ کسوہ کہلاتا ہے۔ جسے ریشم اور روئی سے تیار کیا جاتا ہے۔ غلاف پر انتہائی نفاست اور مہارت سے سونے کی تاروں سے قرانی آیات کی کشیدہ کاری کی جاتی ہے۔
ہر سال وقوف عرفہ کے دن پرانا غلاف اتار کر نیا غلاف کعبہ پر چڑھایا جاتا ہے۔  اس روح پرور تقریب میں ہنرمند اورتکنیکی کارکنوں کے علاوہ گورنر مکہ، سعودی حکام کے علاوہ مسلم ممالک کے سفیر اور خصوصی نمائندے شرکت کرتے ہیں۔ پرانے غلاف کو اتارنے کے بعد چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں میں تقسیم کر دیا جاتا ہے جو اہم شخصیات اور مذہبی تنظیموں میں تبرک کے طور پر تقسیم کر دیئے جاتے ہیں۔

146 سال پرانا باب کعبہ کا غلاف

146 سال پرانا باب کعبہ کا غلاف (فوٹو گرافر: قلمکار)

146 سال پرانا یہ غلاف 1293 ہجری، 1876 بعد مسیح میں عثمانیہ سلطنت کے 34ویں سلطان عبدالحمید دوئم کے دور حکومت (جن کا 33سالہ دور حکومت 1876ء سے 1909ء تک رہا) میں بنایا گیا۔

146 سال پرانا یہ غلاف 1293 ہجری، 1876 بعد مسیح میں عثمانیہ سلطنت کے 34ویں سلطان عبدالحمید دوئم کے دور حکومت (جن کا 33سالہ دور حکومت 1876ء سے 1909ء تک رہا) میں بنایا گیا۔ (فوٹو گرافر: قلمکار)

اس غلاف کا ڈیزائن اور تیاری کا کام خدیو اسماعیل پاشا (محمد علی پاشا کے پوتے اور اس وقت کے حاکم مصر ) کی زیر نگرانی ہوا

اس غلاف کا ڈیزائن اور  تیاری کا کام خدیو اسماعیل پاشا (محمد علی پاشا کے پوتے اور اس وقت کے حاکم مصر ) کی زیر نگرانی ہوا (فوٹو گرافر: قلمکار)

یہ غلاف خالص سلک سے بنایا گیا جبکہ سونے اور چاندی کے دھاگوں سے اس پر قرآنی آیات کی کشیدہ کاری کی گئی۔
اس غلاف کا ڈیزائن اور   تیاری کا کام خدیو اسماعیل پاشا (محمد علی پاشا کے پوتے اور اس وقت کے حاکم مصر ) کی زیر نگرانی ہوا، جنھیں ماڈرن مصر کا بانی کہا جاتا ہے۔ ان کا دور حکومت 1805ء سے 1848ء تک رہا۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس