25 جنوری, 2021
d8a7d988d988d984d988d986daaf da86d8a7d8a6db92 daa9db92 d8b1d988d8b2d8a7d986db81 d8afd988 daa9d9bed88c d986db8cd986d8af daa9d988 d8a8db81
میگزینتعلیم و صحتمعلومات عامہ

اوولونگ چائے کے روزانہ دو کپ، نیند کو بہتر بنائیں‌ اور مٹاپے سے نجات دلائیں

طبی و تحقیقی ماہرین نے دعویٰ کیا ہے کہ ایک ایسی چائے ہے جس کے اگر دن بھر میں دو کپ پی لیے جائیں تو وہ رات کے وقت مٹاپے کو کم کرتی ہے۔

ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق جاپان کی یونیورسٹی آف ٹسوکوبا کے ماہرین مٹاپے یا اضافی وزن کم کرنے کے حوالے سے تحقیق کررہے تھے اس دوران انہوں نے مختلف مشاہدے کیے۔

مطالعے کے دوران ماہرین نے اوولونگ چائے کے فوائد بھی دیکھے  اور بتایا کہ اگر دن بھر میں اس چائے کے دو کپ پی لیے جائیں تو مٹاپے سے نجات مل سکتی ہے۔

ماہرین نے بتایا کہ اوولونگ چائے میں ایسی خاصیت ہے کہ یہ رات کو سوتے وقت جسم کی اضافی چربی اور کیلوریز کو ختم کرتی ہے جبکہ رات کے وقت میں آپ کے میٹا بلوزم کر بڑھاتی بھی ہے۔

ماہرین کے مطابق اس چائے میں مختلف آکسائیڈس شامل ہیں جو نہ صرف انسانی صحت کے لیے مفید ہیں بلکہ یہ مٹاپے کو کم کرنے کے لیے بھی بہت فائدے مند ہیں۔

تحقیق کے دوران ماہرین نے رضاکاروں کو دو حصوں میں تقسیم کیا جن میں سے ایک کو دو ہفتوں تک اوولونگ چائے دی گئی جبکہ دوسرے گروپ کو کافی اور دیگر مشروبات پیش کیے گئے۔

دو ہفتے بعد ماہرین کے سامنے جو نتائج آئے وہ اُسے دیکھ کر حیران رہ گئے کیونکہ جن لوگوں کو اوولونگ چائے دی گئی اُن میں سے 20 فیصد رضاکاروں کی نہ صرف نیند بہتر ہوئی بلکہ اُن کے وزن میں بھی کمی دیکھی گئی جبکہ دوسرے گروپ میں شامل رضاکاروں کے مٹاپے میں اضافہ ہوا۔

ماہرین نے بتایا کہ اس چائے کے استعمال کے دیگر فوائد بھی ہیں جن میں دل کے امراض اور ذیابیطس سے بچاؤ، خلیات کا مضبوط ہونا قابل ذکر جبکہ دیگر امراض جیسے گلے اور سینے کی خرابی، آدھے سر درد کے لیے بھی یہ چائے بہت مفید ہے۔

اوولونگ چائے کیا ہے؟

اوولونگ چائے سب سے مہنگے اور مقبول چینی چائے میں سے ایک ہے ، جو سرخ اور سبز چائے کے درمیان کھڑا ہے۔ اس چائے میں غذائی اجزاء کی ایک بڑی مقدار ہوتی ہے۔ اس مشروب کے زبردست ذائقہ کو محسوس کرنے کے ساتھ ساتھ اس کی ساری فائدہ مند خصوصیات کو محفوظ کرنے کے لیے اسے صحیح طریقے سے تیار کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

نوٹ: عارضہ قلب، ذیابیطس سمیت دیگر پیچیدہ امراض میں مبتلا افراد اپنے طبیب سے مشورے کے بعد یہ چائے استعمال کریں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے