0
0
0
بھارت کی مراٹھی فلم انڈسٹری کے نوجوان اداکار نے خودکشی کر کے اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا۔

بھارتی میڈیا  رپورٹ کے مطابق مراٹھی فلموں میں کام کرنے والے اداکار بھاکرے نے ناندید ٹاؤن گنیش نگر میں واقع اپنے گھر میں پنکھے سے لٹک کر بدھ کی شام خودکشی کی۔

بھاکرے کی اہلیہ مایوری ڈیشھامک بھی مراٹھی فلم انڈسٹری کی اداکارہ ہیں۔

بھارتی میڈیا نے ذرائع سے ملنے والی اطلاعات کو اپنی رپورٹ کا حصہ بنایا اور لکھا کہ بھاکرے کی پنکھے میں جھولتی لاش اُن کے اپارٹمنٹ سے ملی، یہ گھر انہیں والدین نے خرید کر دیا تھا۔

اداکار کی اپنی اہلیہ کے ساتھ یادگار تصویر

اداکار کی اپنی اہلیہ کے ساتھ یادگار تصویر

رپورٹ کے مطابق بھاکرے نے مراٹھی انڈسٹری کی کامیاب ترین فلموں ’بھاکار اور لچار تھارلا پکا‘ میں مرکزی کردار ادا کیا تھا۔

واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اداکار کے گھر پہنچی اور اُن کی لاش کو ضابطے کی کارروائی کے لیے اسپتال منتقل کیا۔ شیوا جی نگر تھانے کے افسر نے واقعے کی تحقیقات کا آغاز کردیا۔

غیر مصدقہ اطلاعات یہ ہیں کہ بھاکر چند روز سے ذہنی دباؤ کا شکار تھے، انہوں نے چند روز قبل سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنی آخری ویڈیو شیئر کی تھی جس میں وہ یہ بتا رہے تھے کہ آخر ایک شخص خودکشی کا فیصلہ کیوں کرلیتا ہے۔

یاد رہے کہ دو روز قبل بھارت کی تامل انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی نوجوان اداکارہ وجایا لکشمی نے خودکشی کی کوشش کی تھی، خوش قسمتی سے اُن کی زندگی بچ گئی تھی۔ وجایا کا شمار انڈسٹری کے متحرک اداکاروں میں ہوتا ہے کیونکہ گزشتہ دو برس میں انہوں نے شوبز کے لیے بہت زیادہ کام کیا۔ خودکشی کی کوشش سے قبل وجایا نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر ایک ویڈیو شیئر کی تھی جس میں اُن کا کہنا تھا کہ ’کچھ دیر میں میری موت ہوجائے گی‘۔

یاد رہے کہ 14 جون 2020 کو بالی ووڈ کے ابھرتے ہوئے نوجوان اداکار سشانت سنگھ نے بھی خودکشی  کی، اُن کے دوستوں کا کہنا تھا کہ اداکار کام نہ ملنے کی وجہ سے شدید ڈپریشن کا شکار تھے۔

سشانت سنگھ راجپوت نے 2013ء میں فلمی کیریئر کا آغاز کیا تھا، انھوں نے ایک درجن فلموں میں ہی کام کیا تھا، انھیں 2014ء میں ریلیز ہونے والی فلم پی کے سے شہرت ملی جس کے بعد انہوں نے مہندرا سنگھ دھونی کی زندگی پر بننے والی فلم میں مرکزی کردار ادا کر کے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا تھا۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس