0
0
0
سعودی عرب میں گزشتہ تین روز سے لاپتا ایک شہری صوبہ الریاض میں واقع ایک صحرا میں حالتِ سجدہ میں دم توڑ گئے۔

سعودی پولیس کی ایک امدادی ٹیم کو ذویحی حمود العجالین نامی اس شہری کی لاش صوبہ الریاض میں واقع ایک صحرا کے وسط سے ملی ہے۔ اس ٹیم کی امدادی کارروائی کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ہیں۔ان میں ذویحی کی ڈبل کیبن کار پر لکڑیوں کا گٹھڑ دیکھا جاسکتا ہے جس سے اہلکاروں نے یہ اندازہ لگایا ہے کہ وہ صحرا میں اپنی گاڑی پر خاندان کے لیے لکڑیاں اکٹھی کرنے گئے تھے۔

مقامی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق 40 سالہ ذویحی حمود العجالین کا تعلق الریاض کے علاقے وادی الدواسر سے تھا اور وہ گزشتہ جمعرات کو اپنے گھر سے نکلے تھے اور لاپتا ہوگئے تھے۔پولیس نے ان کی تلاش کے لیے مختلف علاقوں کی جانب ٹیمیں بھیجی تھیں۔ ان میں ایک ٹیم نے صحرا کا چپّہ چپّہ چھان مارا تھا اور وہ ان کی کار تلاش کرنے میں کامیاب ہوگئی۔کار سے چند میٹر کے فاصلے پر لق ودق صحرا میں ذویحی حالت سجدہ میں پائے گئے اور ان کی نماز کے دوران ہی کسی وقت روح قبض ہوگئی تھی۔ سوشل میڈیا پر ان کی ویڈیو کی بڑے پیمانے پر تشہیر کی گئی ہے اور لوگ ان کی مغفرت کی دعائیں کر رہے ہیں۔

آپ کا ردعمل؟

پوسٹ کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔


فیس بک کمنٹس